“چند اندھیرے لمحات”

میں ہڑبڑا کر اُٹھ بیٹھا،،،،،،ہر طرف گھپ اندھیرا تھا اور مجھے کچھ سُجائی نہیں دے رہا تھا،،،،،،میں نے آنکھیں پھاڑ پھاڑ کر دیکھنے کی کوشش کی،،،،،مگر گھپ اندھیرے میں روشنی کی ہلکی سی رمق بھی نظر نہ آئی،،،،،مجھے اپنی سانس سینے میں گھٹی محسوس ہوئی،،،،،میرا دل چاہا کہ زور زور سے چلاؤں،،،،اپنے پیاروں کو مدد کے لئے بلاؤں،،،،،مگر
اچانک کمرہ روشنی سے جگمگا اُٹھا ،،،،،،شاید بجلی آ چکی تھی،،،،، میں اپنے بستر سے اٹھ کھڑا ہوا،،،،،، سامنے لگے آئینے میں مجھے اپنا چہرہ پسینے سے شرابور نظر آیا،،،،،”اُن چند اندھیرے لمحات” نےمجھے بے حال کر دیا تھا
مجھے بہت کچھ سوچنے پر مجبور کر دیا تھا،،،،،،
میں سوچتا چلا گیا،،،،، مجھے قبر کے اندھیرے کا خیال آیا،،،،،،میرا دل ڈوبنے لگا،،،،،،
کیا ہوگا؟؟؟؟؟
انسانی عقل کی پرواز کی حد مقرر ہے،،،،،ہماری سوچیں اُس قائم کی ہوئی حدوں سے ٹکرا کر واپس ہو جاتیں ہیں اور ہم بے بسی کی تصویر بنےاس فانی دنیا میں واپس،،،،،،،
میں سوچتا چلا گیا،،،،کیا ہوگا،،،،،پر جواب نہیں مل سکا،،،،میری سوچوں کی پرتیں کھلتی چلی گئیں،،،،
کیا ہوگا؟؟
نہیں معلوم،،،،،
مگر کیا کرنا ہے،،،یہ تو معلوم ہے،،،،،کیا کرنا ہے سب بتا دیا گیا ہے،،،،
کیسے کرنا ہے،،،، سب سکھا دیا گیا ہے،،،،،،سمجھا دیا گیا ہے،،،،،
کیا میں اس پر عمل کر رہا ہوں ،،،میرا دم گُٹھنے لگا،،،،ایک بار پھر قبر کے اندھیرے کا خیال،،،،،
اپنی زندگی ایک فلم کی طرح میری نظروں میں گھومنے لگی،،،،،،
ہم عارضی لذّتوں اور آسائشوں کے فریب میں مبتلاء،،،،،
ساری زندگی انکے پیچھے بھاگنے میں ضائع کر دیتے ہیں،،،،،،
ہم بھول جاتے ہیں کہ ہمارا مقصدِ حیات کیا ہے؟
اور
ہم کیا کئے جارہے ہیں؟؟؟؟
قرآن کے فرمان ،حضورِ پاک صلی الله عليه وسلم کی تعلیمات،ساتھ ساتھ میرے اعمال،،،،،بلا کا تضاد،،،،
دورِ جدید کےشیاطین(انٹرنیٹ،سمارٹ فون،کیبل اور ٹی وی)میری نظروں کے سامنے رقص کرنے لگے،،،،،
کیا ہم اتنی طاقت رکھتے ہیں کہ صرف اپنے ہاتھوں میں ہر وقت پکڑے موبائل فون کو تسبیح میں تبدیل کر سکیں؟؟؟؟؟
ہم اپنی زندگیوں کے قیمتی لمحات انٹرنیٹ،سمارٹ فون اور ٹی وی کی نظر کرتے جا رہےہیں ،،،،،
کیا دنیا کا کوئی سمارٹ فون اتناایڈوانس ہے کہ ہماری قبر کی تاریکی دور کر سکے؟؟؟؟؟؟
میری آنکھوں میں آنسو بھر آئے،،،،،
میں سوچتا رہا اور دل ڈوبتا رہا،،،،،،،
(ابنِ آدم)

Advertisements
This entry was posted in چند اندھیرے لمحات. Bookmark the permalink.

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s