احساس کے رشتے

تمام دن کا تھکا ہارا سورج،اپنا جاہ و جلال لٹانے کے بعد،اختتامِ سفر پر گامزن۰۰۰میرے چاروں طرف اک عجب سی خاموشی چھائی ہوئی تھی۰۰۰میرے پیروں تلے سمندر کی نرم و گیلی ریت،اک عجب سا سرور دے رہی تھی۰۰۰تازگی کا احساس جو میرے پیروں کے راستے تمام جسم میں سرائیت کر رہا تھا۰۰۰۰میری روح کو معطر کر گیا۰۰۰مجھے اپنا وجود ہلکا پھلکا محسوس ہونے لگا۰۰۰۰۰مجھ پر چھائی افسردگی آہستہ آہستہ دم توڑ رہی تھی اور میں اُس جمود کی کیفیت سے باہر آ رہا تھا،جس نے میرے پورے وجود کو پچھلے کئی دنوں سے اپنے حصار میں مقّید کیا ہوا تھا۰۰۰۰۰۰۰۰۰
وجہ وہی۰۰۰اپنے کی بےرخی اور سرد رویہ۰۰۰۰۰
میں رشتوں کی اصلیت اور انکی بنیاد پر سوچ رہا تھا۰۰۰جتنا میں سوچتا جاتا مجھ پر آگہی کی پرتیں کھلتی چلی جا رہی تھیں۰۰۰۰۰
رشتوں کی بنیاد کیا ہے؟؟؟؟؟؟
میں نے اپنے آپ سے سوال کیا؟؟؟؟؟؟
خون کے رشتے،،،رشتہ داریاں،،،،،دوستی کے بندھن یا تعلق۰۰۰۰۰۰
نہیں۰۰۰۰
اصل رشتے دراصل احساس کے رشتے ہیں۰۰۰۰۰بندھن کوئی بھی ہو۰۰۰۰۰اگر احساس نہیں تو کچھ بھی نہیں۰۰۰۰۰۰۰۰
یہ احساس ہی تو ہے جو اپنوں کو غیر اور غیروں کو اپنا کر دیتا ہے۰۰۰۰
دوسروں کی چھوٹی چھوٹی خوشیوں،ضرورتوں اور چاہتوں کا احساس ہی دراصل تا حیات قائم و دائم رہنے والے رشتوں کا ستون ہے۰۰۰۰۰۰۰۰۰
(ابنِ آدم)

Advertisements
This entry was posted in احساس کے رشتے. Bookmark the permalink.

4 Responses to احساس کے رشتے

  1. Anonymous says:

    True sirf ahsaas he ki waja say rishte mazboot or qaim rehte hain

    Like

  2. Rehan Muavia says:

    very nice bro

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s