“شہرِ خموشاں”

“شہرِ خموشاں”

قبر پر مٹی ڈالنے کے بعد میں ہاتھ جھاڑتے جھاڑتے رُک گیا،مجھے کہیں پڑھی ہوئی عبارت یاد آگئی۰۰۰۰”دیکھ انسان تیری اوقات،،،لوگ تجھ پر مٹی ڈالنے کے بعد،،،ہاتھ بھی تجھ پہ جھاڑیں گے۰۰۰۰۰۰”
ایک لمحے کے لیئے میں کانپ اُٹھا،،،میں نے آہستگی سے اپنے ہاتھ پر لگی مٹی صاف کی اور کنارے لگے ایک درخت کے سائے تلے آ کھڑا ہوا۔
میں ایک تدفین میں شامل تھا ،،، شام کے سائے گہرے ہورہے تھے اور نارنجی روشنی شہرِ خموشاں کی پرُاسرایت میں اضافہ کر رہی تھی،،،میرے چاروں طرف قطار در قطار قبریں پھیلی ہوئی تھیں ۰۰۰۰۰انسان کی بے بسی اور لاچاری کی تصویر۔
میں دیکھ سکتا تھا اُن سورماؤں کو جو اپنے تمام رعب و دبدبے کے ساتھ منوں مٹی تلے سو رہے تھے۰۰۰۰اُن حسیناؤں کو جنکے حسن و رعنایت کا ایک زمانہ مداح تھا۔اُن دانشوروں کو،جنکی عقل و فراست کی ہر طرف دھوم تھی۰۰۰۰۰اُن بادشاہوں کو جنکے جاہ و جلال کے آگے ایک دنیا سر بسجود تھی۰۰۰۰اُن جوانوں کو جو چلتے تھے تو لگتا تھا کہ قدموں تلے زمین کو پھاڑ ڈالیں گے۰۰۰۰مگر!
سب کی آخری منزل یہیں تھی،،،،کون آنا چاہتا تھا؟؟
مگر سب کو یہاں آنا پڑا۰۰۰۰پھر!
میں سوچتا چلا گیا۰۰۰کس نے انکا ساتھ دیا،،،کون انکو بچا پایا؟؟؟
وہ کیا کیا ساتھ لائے۰۰۰۰کچھ تیاری کی تھی؟؟؟کچھ سامانِ آخرت؟؟؟؟
مال و اسباب،،،اولاد،،،،جاہ و جلال،،،،حسن،،،،سب رہ گیا۰۰۰۰۰
“خالی ہاتھ”
سسکیوں کی آواز نے مجھےچونکا دیااور میں اُس کیفیت سے باہر نکل آیا،،،مرحوم کا جواں سالہ بیٹا کسی اپنے کے گلے لگے سسک رہا تھا،،،میں نے اُسکے کاندھے پر ہاتھ رکھا،،،،،اسُ نے میری طرف خالی نظروں سے دیکھا،،،اسکی آنکھوں میں چھُپے سوالات کا میرے پاس جواب نہ تھا،،،،میں نظریں جھُکائے بوجھل قدموں سے قبرستان کے دروازے کی طرف بڑھ گیا۔
(ابنِ آدم)

Advertisements
This entry was posted in Uncategorized. Bookmark the permalink.

One Response to “شہرِ خموشاں”

  1. huma says:

    Yehi akhr yehi akhir.haqeqaton sy bhagty log.apny ap main mugn.Mger aik confidence k ummate Mohammadi hn.Allhamdullilah.Allah hm sb k gunah bksh dy.Ameen ya rabul Alameen.ibne adam tmhara alfaz ka chunao behtreen hy.

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s