دل ہی تو ہے

        تیز گرم تپتی ہوئی سنگلاخ چٹانیں میرے پاؤں جھلسائے دے رہی تھیں،،،،،سورج جیسے حقیقتأ سوا نیزے پر اُتر آیا تھا۔میرا تمام جسم پسینے سے شرابور تھا۔مگر ابھی کچھ کام باقی تھا اور مجھے مزید ایک دو گھنٹے ان سنگلاخ چٹانوں کی خاک چھاننی تھی-میری جاب ہی کچھ ایسی تھی کہ میں اکثر جنگلوں ،بیابانوں میں سر کھپاتا پھرتا تھا۔آج بھی کچھ ایسا ہی دن تھا اور میں پچھلے کئی گھنٹوں سے سخت گرمی کے موسم میں ان جلتی ہوئی چٹانوں کے سینے پر محو ِسفر تھا۔اچانک میرے کان دور سے آتی اک ضربِ مسلسل کی صداؤں پہ مرکوز ہو گئے،،،،جیسے کوئی مسلسل پوری قوت کے ساتھ چٹانوں پہ ضربیں لگا رہا ہو۔

میں تجسس کی لگام تھامے بے اختیار اُن آوازوں کی کھوج میں نکل پڑا۔تھوڑی ہی دور ایک چٹان کی آڑ میں مجھے کچھ مزدور نظر آئے،جو چٹانوں کے بڑے بڑے پتھروں کو ہتھوڑوں کی مدد سے توڑ کر عمارتی استعمال میں  لانے کے قابل بنانے میں مصروف تھے۔

           میں قریب  پڑے ایک پتھر پر بیٹھ گیا اور دلچسپی سے اُن کو کام کرتے دیکھنے لگا۔بڑے بڑے پتھربھی ،ہتھوڑوں کی پڑنے والی ضرب ِ مسلسل کی تاب نہ لاتے ہوئے،ریزہ ریزہ ہوئے جا رہے تھے۔پہلے پہل وہ کاری سے کاری ضرب بھی برداشت کر جاتے۔پھر اُن میں دڑاڑیں پڑنا شروع ہوئیں اور آخرکار کوئی ایک معمولی سی ضرب بھی انکو ریزہ ریزہ کر جاتی،،،بکھیر دیتی۔

میں دیکھتا رہا اور سوچتا رہا،،،،،،،،”انسانی دل”

انسانی دل کی مثال بھی اس پتھرکی سی ہے،جو دوسروں کے رویوں ،لہجوں اور الفاظ کی ضربیں برداشت کرتا جاتا ہے،مگر ہر آنے والی ضرب اسکے دل میں ایک نئی دڑاڑ ڈالتی جاتی ہے اور بالآخر جب اُسکے صبر وضبط کا پیمانہ لبریز ہوجاتا ہے تو ایک معمولی سی بات بھی اسکے دل کو ریزہ ریزہ کر ڈالتی ہے،کرچی کرچی کر جاتی ہے۔پھر چاہے جانے والے لوٹ بھی آئیں ،،،،

کتنی ہی معافی تلافیاں ہو جائیں ،،،،شرمندگی اور احساسِ ندامت ہو مگر آبگینہءدل جب اک بار ٹوٹ گیا سو ٹوٹ گیا۔

میں ایک ٹک چٹانوں کے مضبوط پتھروں کو ریزہ ریزہ ہو کر بکھرتے دیکھ رہا تھا۔

(ابنِ آدم)

Advertisements
This entry was posted in دل ہی تو ہے. Bookmark the permalink.

4 Responses to دل ہی تو ہے

  1. Anonymous says:

    Jo chahty hn wo lout bhi aty hn mger ager chahit hi na ho tw ?waqt sab sabit krdeta hy.khawahish ho tw nazar rasty

    Like

  2. Anonymous says:

    Very deep n really true

    Like

  3. Anonymous says:

    Waiting for new

    Like

  4. Anonymous says:

    Please write something I am waiting

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s