محبت بولتی ہے

      میں نے آہستگی کے ساتھ الماری کا دروازہ کھولا اور اندھیرے میں ٹٹول ٹٹول کر اپنی مطلوبہ اشیئا تلاش کرنے لگا-

مجھے آفس سے دیر ہو رہی تھی،رات گھر میں مہمان تھے اور سونے میں کافی دیر ہوگئی تھی-مجھے فکر تھی کہ میری سوئی ہوئی شریکِ حیات نہ جاگ جائے جو مجھ سے بہت بعد میں تمام گھر سمیٹ سماٹ کر سوئی ہوگی،،،شاید آدھی رات کے بعد۰۰۰۰۰۰۰۰۰۰۰

میں نے الماری بند کی،شوز ہاتھ میں اُٹھا کر دبے پاؤں لاؤنج میں آگیا-

اور وہی ہوا،شاید میرے دروازہ کھولنے کی آواز سے وہ جاگ گئی،پلک جھپکتے ہی وہ کمرے سے باہر تھی-

آپ نے مجھے اُٹھایا کیوں نہیں،اُس نے ہمیشہ کی طرح شکوہ کیا اور تیزی سے کچن میں مصروف ہوگئی،اُسے معلوم تھا کہ چند لمحوں کی سستی سے میں کچھ کھائے پئیے بغیر آفس کو نکل جاؤں گا-میں جوتے پہنتے ہوئے اُسے تیز تیز کام کرتے ہوئے دیکھ رہا تھا،اُس کے چہرے سے تھکن عیاں تھی،آنکھوں میں بھرپور نیند کا اثر مگر وہ کس تیزی سے مصروف تھی-

میں سوچ رہا تھا،”محبت کے کتنے رنگ،،،،کیسے کیسے رنگ

محبت لفظوں کی محتاج نہیں،،،نہ اسُے اظہار کی ضرورت،،،،،

یہ تو جھلکتی ہے،،،چھلک چھلک پڑتی ہے،،،،ہمارے اک اک انگ سے،،،اس کے اپنے ہی رنگ،،،،

میرا دبے پاؤں چلنا،،،اسکا نیند سے لڑ کر اُٹھنا،،،،

محبت تو یہی ہے،،،،،ہاں محبت یہی ہے۰۰۰۰۰۰”

(ابنِ آدم)

Advertisements
This entry was posted in محبت بولتی ہے. Bookmark the permalink.

2 Responses to محبت بولتی ہے

  1. Anonymous says:

    Wives are always awesome

    Like

  2. Anonymous says:

    spouse are mostly caring and loving, may be not in initial stage of their journey, but majority are after sometime…

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google photo

You are commenting using your Google account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s