چاہت کی قندیلیں

جاتے دسمبر کی یخ بستہ رات کے آخری پہر میں بھی نیند میری آنکھوں سے کوسوں دور تھی-ہر طرف اک اداسی،اک سوگواری،اک سناٹا، اک خاموشی کا راج تھا-اتنا سناٹا کہ گھڑی کی ٹک ٹک کی گونج مجھے دوسرے کمرے سے صاف سنائی دے رہی تھی۰۰۰مگر آج سب مل کر بھی میرے دل کی خوشی کو کم کرنے میں ناکام تھے۔

        میں سرِ شام سے ہی ایک سرشاری،ایک مسرت،ایک سرور کی سی کیفیت میں مبتلا تھا،میرا دل واقعی بلیوں اچھل رہا تھا،اسکا بس نہیں چل رہا تھا کہ وہ سینہ توڑ کر باہر نکل آئے۔

                        میں پچھلے کئی گھنٹوں سے اپنے دھڑکتے دل،لرزتے وجود اور حیراں عقل کو سمجھانے میں مصروف تھا کہ یہ سب ایک خواب نہیں ،حقیقت ہے۔وہ جس کے خواب میں نے برسوں دیکھے،،،وہ کہ جسکے ہر ایک انگ کا،،،،،،ہر ایک رنگ کا میں دیوانہ تھا،،،،وہ جسے میں نے اپنی ہر دعا میں مانگا،،،،اپنے وجود سے زیادہ چاہا،،،،جسکی ہر ایک جھلک کے لئیے میں نے پہروں انتظار کیا،،،جسے سوچ سوچ کر میری صبح ہوئیں اور جسکی یادوں نے میری شاموں کو مہکایا،،،،جسکی ہر ایک ادا نے مجھے پہروں جگایا،،،،میرے خوابوں کو جگمگایا،،،،وہ میرا سب کچھ تھی ،،،آج برسوں کے بعد مجھے اسکی حسیں آنکھوں میں چاہت کے روشن دئیے نظر آئے تھے،مجھے محبت کی مہک آرہی تھی ،کسی کے دل میں بس جانا،کسی کی سوچ میں رچ جانا ہی محبت کی معراج ہے ۔

یہ محبت بھی بڑی عجیب شے ہے،مل جائے تو قرار نہیں،اور نہ ملے تو بھی بے قراری ہی بے قراری ۰۰۰۰۰دل و دماغ میں ایک گومگو سی کیفیت،،،دل تھا کہ مان کے ہی نہیں دے رہا تھا۔بعض اوقات اللہ ہمیں ،ہماری طلب سے بھی زیادہ عطا کر دیتا ہےاور ایسے راستے سے عطا کرتا ہے کہ انسانی عقل سوچ بھی نہ سکے،،،بے شک وہ اپنے بندوں سے ستر ماؤں سے زیادہ پیار،،،،میری آنکھوں کے گوشے نم ہونے لگے،،،مگر آج کی رات کے یہ آنسو،خوشی کے آنسو تھے،،،،شکر کے آنسو تھے،،،،میں نے بستر چھوڑ دیا ،،،، وضو کیا اور اپنے پروردگار کے حضور سربسجود ہو گیا،،،،بے شک وہ ہر ایک شے پر قادر ہے۰۰۰۰۰۰

(ابنِ آدم)

Advertisements
This entry was posted in چاہت کی قندیلیں. Bookmark the permalink.

4 Responses to چاہت کی قندیلیں

  1. Anonymous says:

    Jisko chahat mili ussy Mubarak. Kash hm bhi kisi ki khoshi ki wah hoty

    Like

  2. Anonymous says:

    Very nice thoughts….keep writing Ibneadam

    Like

  3. Anonymous says:

    Waiting for new 1

    Like

  4. Samia says:

    Very nice ibneadam.

    Like

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s