Monthly Archives: April 2020

لفظ تھے کہ نشتر

رات کے اس پچھلے پہر نیند جیسے اسکی آنکھوں سے روٹھ گئی ہو۔کسی پل اُسے چین نہیں آرہا تھا،اک بےکلی،اک بے چینی جس میں اسکا وجود نڈھال ہوا جا رہا تھا۔سر بوجھ سے پھٹا جا رہا تھا۰۰۰۰۰آنکھیں تھیں کہ جیسے … Continue reading

Posted in Uncategorized | 1 Comment