Category Archives: شہرِ خموشاں

“شہرِ خموشاں”

“شہرِ خموشاں” قبر پر مٹی ڈالنے کے بعد میں ہاتھ جھاڑتے جھاڑتے رُک گیا،مجھے کہیں پڑھی ہوئی عبارت یاد آگئی۰۰۰۰”دیکھ انسان تیری اوقات،،،لوگ تجھ پر مٹی ڈالنے کے بعد،،،ہاتھ بھی تجھ پہ جھاڑیں گے۰۰۰۰۰۰” ایک لمحے کے لیئے میں کانپ … Continue reading

Posted in شہرِ خموشاں | 1 Comment